قومی

  • قومی
  • Sep 14, 2018

سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز کا سفر آخرت

سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز کو جاتی امرا لاہور میں سپردخاک کر دیا گیا۔ مرحومہ گیارہ ستمبر کو کینسر کے خلاف جنگ لڑتے ہوئے لندن میں انتقال کر گئی تھیں ۔
سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز کی نماز جنازہ شریف میڈیکل سٹی کی گراونڈ میں ادا کی گئی ۔نماز جنازہ میں صوبائی دارالحکومت لاہور سمیت ملک بھر سے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔
معروف عالم دین مولانا طارق جمیل نے نماز جنازہ پڑھائی ۔ سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کو ان کی اہلیہ کے جنازے میں شرکت کیلئے خصوصی طور پر پیرول پر رہا کیا گیاہے ۔ مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف ، حمزہ شہباز ،سلمان شہباز اور شریف خاندان کے دوسرے افراد نے بھی نماز جنازہ ادا کی۔
پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر رہنمااور کارکن مرحومہ کی نماز جنازہ میں شرکت کیلئے پہنچے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے خصوصی وفد نے بھی گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کی قیادت میں نماز جنازہ میں شرکت کی ۔ قومی اسمبلی کے سپیکر اسد قیصر ، پاکستان مسلم لیگ ق کے رہنماوں چوہدری شجاعت حسین ، چوہدری پرویز الہی جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی ، جماعت اسلامی اور ایم کیو ایم کے رہنماوں سمیت ملک کی دوسری سیاسی جماعتوں کے رہنماوں نے بھی جنازے میں موجود تھے ۔
مرحومہ کے عزیز و اقارب اور مختلف سماجی مذہبی اور دوسری تنظیموں کے نمائندے بھی نماز جنازہ میں شریک ہوئے ۔ اس موقع پر مرحومہ کے ایصال ثواب کیلئے خصوصی دعا مانگی گئیں۔مختلف سیاسی رہنماوں نے بیگم کلثوم نواز کی وفات پر شریف خاندان کیساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کیا ۔
بعد میں بیگم کلثوم نواز کی میت کو جاتی امرا میں انکے خاندانی قبرستان میں سپردخاک کر دیا گیا ۔بیگم کلثوم نواز کی عمر 68 برس تھی ۔ بنیادی طور پر وہ ایک گھریلو خاتون تھیں لیکن سیاست میں بھی جمہوریت کیلئے ان کا مختصر کردار ملک کی سیاسی تاریخ کا حصہ رہے گا ۔