قومی

  • قومی
  • Nov 15, 2019

وزیرِ اعظم کی صدارت میں نجکاری کے عمل میں پیش رفت کا جائزہ اجلاس

حویلی بہادر شاہ اور بلوکی پاور پلانٹس، ایس ایم ای بنک، سروسز انٹرنیشنل ہوٹل لاہور، جناح کنونشن سنٹر کی نجکاری کا عمل تیاری کے آخری مراحل میں ہے جبکہ گدو اور نندی پور پاور پلانٹس، فرسٹ وویمن بنک، پاک پٹرولیم لمیٹڈاور اسٹیٹ لائف سمیت مختلف اداروں کی نجکاری کا عمل میں بھی خاطر خواہ پیش رفت ہوئی ہے۔
اسلام آباد میں وزیرِ اعظم عمران خان کی صدارت میں ہونیوالےاجلاس کو بتایا گیا کہ نجکاری کے عمل میں ان اداروں اور املاک کو شامل کیا گیا ہے جو سرکاری خزانے پرمسلسل بوجھ ہیں یا اپنی صلاحیت سے کم کارکردگی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔
وزیرِ اعظم نے کہا کہ یہ تاثردرست نہیں کہ نجکاری کے تحت حکومت محض نقصان کے حامل اداروں سے چھٹکارہ حاصل کرنا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ نان ٹیکس ریونیو میں اضافہ کرنا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے ۔قومی خزانے کو نقصان سے بچانے کے ساتھ اداروں کی کارکردگی کو ان کی استعداد کے مطابق چلانا، بہترین نتائج کا حصول اور مجموعی طور معیشت کی بہتری نجکاری عمل کی اصل روح ہے۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ نجکاری کے عمل سے ان اداروں کی کارکردگی کو بہتر کرنے میں مدد ملے گی ۔ وزیرِ اعظم نے سیکرٹری نجکاری کو ہدایت کی کہ نشاندہی کیے جانے والے تمام اداروں کی نجکاری کو مقررہ ٹائم فریم میں مکمل کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اثاثوں اور اداروں کی نجکاری کے عمل میں شامل تمام وزارتوں کے متحرک کردار اور بھرپور تعاون کو بھی یقینی بنایا جائے۔ عمران خان نے کہا کہ وزیرِ اعظم آفس کو نجکاری عمل کی پیش رفت سے مسلسل آگاہ رکھا جائے اور اس ضمن میں کسی بھی دقت کو ہنگامی بنیادوں پر دور کیا جائے۔