قومی

  • قومی
  • Jul 19, 2019

قومی سلامتی کے موضوع پر دوروزہ سیمینار

آرمی آڈیٹوریم راولپنڈی میں دفاعی صنعت میں خودانحصاری کے ذریعے قومی سلامتی کے موضوع پر دوروزہ سیمینار ہوا۔آئی ایس پی آر کے مطابق سیمینار میں وفاقی وزراء زبیدہ جلال، چوہدری فواد حسین، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد ، آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ ، پرائیویٹ اور پبلک سیکٹر کے نمائندوں نے شرکت کی ۔
دفاعی پیداوار کی وفاقی وزیر زبیدہ جلال اور مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد نے ملکی دفاعی صنعت میں خودانحصاری کے حصول کے حوالے سے سیمینار میں تفصیل سے تبادلہ خیال کیا۔ دفاعی پیداوار میں نجی شعبے کی شراکت داری کے موضوع پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا۔سیمینار میں دفاعی صنعت کو درپیش چیلنجز کا بھی احاطہ کیا گیا۔
آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے سیمینار کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ دفاعی صنعت میں خودانحصاری کے حصول کے لئے پبلک پرائیویٹ شراکت داری بہت ضروری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ دفاعی صنعت میں شراکت داری کے وسیع مواقع موجود ہیں ۔آرمی چیف نے کہاکہ ضرورت اس امر کی ہے کہ نجی اور سرکاری شعبوں کو ایک مربوط انداز میں دفاعی پیداوار کے شعبوں میں شراکت داری کرنی چاہیے ۔
آرمی چیف نے کہاکہ دفاعی پیداوار کے شعبے میں خودانحصاری اور ترقی سے ملکی معیشت پر بھی مثبت اثرات مرتب ہوں گے ۔ آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے سیمینار کے شرکاکا دفاعی پیداوار میں خودانحصاری کے حصول کے لئے دی جانے والی ٹھوس تجاویز کا شکریہ بھی ادا کیا۔
دو روزہ سیمینار میں ملکی دفاعی صنعت کی ترقی کے لئے متعدد سفارشات بھی پیش کی گئیں جس کے مطابق اضافی دفاعی مصنوعات کی برآمدات بڑھانے،وزیراعظم کی سربراہی میں دفاعی پیداوار میں خودانحصاری کیلئے ٹاسک فورس کے قیام ،سافٹ ویئر انڈسٹری کی استعداد کار بڑھانے کیلئے ڈیجیٹل پارکس قائم کرنے اور جامعات میں دفاعی انڈسٹری کی خودانحصاری کیلئے ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ کے فروغ کی سفارشات شامل ہیں۔
سیمینار کے اختتام پر آرمی چیف جنرل قمرجاویدباجوہ نے دفاعی مصنوعات کی نمائش کا دورہ بھی کیا۔ آرمی چیف نجی اور سرکاری شعبوں کے سٹالز پر گئے ۔انہوں نے مختلف ملکی دفاعی مصنوعات کا معائنہ کرتے ہوئے ان کے اعلیٰ معیار کو سراہا۔