بین الاقوامی

  • Sep 13, 2021

عالمی برادری افغانستان کے حوالے سے بڑھ چڑھ کر اپنا کردار ادا کرے : انتونیو گوتریس

اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری انتونیو گوتریس نے افغانستان میں طالبان کیساتھ مل کرکام کرنے پر زور دیتے ہوئے عالمی برادری سے کہا ہے کہ افغانستان میں انسانی بحران سے نمٹنے کیلئےطالبان کیساتھ تعاون ضروری ہے تاکہ لوگوں کو مشکلات سے نکالا جا سکے۔ جنیوا میں کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دھائیوں سے جاری خانہ جنگی سے متاثرہ افغان عوام اس وقت بدترین اقتصادی اور انسانی بحران کا شکار ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ورلڈ فوڈ پروگرام کے مطابق افغانستان میں ایک کروڑ 40لاکھ افراد کو قحط کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے،اگر فوری امداد نہ دی گئی تو رواں ماہ کے آخر تک افغانستان میں اشیائے خوردونوش ختم ہو سکتی ہیں ۔سیکرٹری جنرل نے بتایا کہ اس سلسلے میں اقوام متحدہ اپنے سنٹرل ایمرجنسی رسپانس فنڈ سےدو کروڑ ڈالر فراہم کرے گا۔لیکن صورتحال اس امر کا تقاضا کرتی ہے کہ عالمی برادری بڑھ چڑھ کر اپنا کردار ادا کرے۔کانفرنس میں پاکستان کی نمائندگی وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ورچوئل شرکت کے ذریعے کی ۔انہوں نے کہا کہ مشکل حالات میں افغان عوام کو تنہا نہیں چھوڑنا چاہیے۔وزیر خارجہ نے بیرون ملک منجمد کئے گئے افغان اثاثے بحال کرنے کا مطالبہ کیا ۔
کانفرنس میں اقوام متحدہ کی جانب سے افغانستان کی فوری امداد کیلئے عالمی برادری سے 60کروڑ 60لاکھ ڈالر امداد کی اپیل کی گئی ۔اس موقع پرامریکہ کی جانب سے 6کروڑ 40لاکھ ڈالر اور ناروے کی جانب سے ایک کروڑ 15لاکھ ڈالر امداد کا اعلان کیا گیا۔