بین الاقوامی

  • May 08, 2021

بھارت میں کورونا وائرس کی شدت میں دن بدن اضافہ : روزانہ کی بنیاد پر چار لاکھ سے زائد مریض رپورٹ، تعداد 2 کروڑ 18 لاکھ سے تجاوز

بھارت میں کورونا بے قابو گیا ہے۔ کورونا وائرس کی شدت میں دن بدن اضافہ ہو تا جا رہا ہے اور روزانہ کی بنیاد پر 4 لاکھ سے زائد مریض رپورٹ ہو رہے ہیں جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد 2 کروڑ 18 لاکھ 86 ہزار سے بڑھ چکی ہے۔ گزشتہ 24گھنٹے کے دوران کورونا کے 4 لاکھ 14 ہزار سےزیادہ کیس رپورٹ ہو ئے جبکہ 4ہزار194 سے زا ئد ریکارڈہلاکتیں ہو ئی ہیں۔ بھارت میں تاریخ کے بدترین صحت کے بحران کے دوران مودی حکومت کے ذاتی آرام و آسائش کو ترجیح دینے پر امریکی نشریاتی ادارے نے رپورٹ شائع کی ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مورخ لکھے گا کہ بھارت مر رہا تھا اور مودی بانسری بجا رہا تھا۔مودی کے دیس میں صرف اپریل میں 75 لاکھ سے زائد افراد روزگار سے محروم ہو گئے جبکہ دوسری جانب دلی میں بھارتی پارلیمنٹ کی عمارت کی مرمت اور بحالی جبکہ وزیر اعظم کے اپنے گھر کی تعمیر کا پونے 2 ارب سے زائد لاگت کا تعمیراتی منصوبہ جاری رکھنے پر عوام میں شدید غم و غصہ پایا جارہا ہے۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ سرکاری اعداد و شمار میں کورونا وائرس کے باعث ہونے والے جانی نقصان کے اصل حقائق سامنے نہیں لائے جا رہے۔ دوسری جانب بھارت کے ہسپتالوں میں آکسیجن کا بحران جاری ہے، لوگ اپنی مدد آپ کے تحت آکسیجن کا بندوبست کر رہے ہیں۔ بروقت آکسیجن نہ ملنے پر کئی مریض ہلاک ہو چکے ہیں۔ دلی میں ایمبولینس کی کمی کی وجہ سے کئی رکشوں کو ایمبولینس میں بدل دیا گیا۔ کانگریس رہنما راہول گاندھی نے کہا ہے کہ ملک کو مکمل لاک ڈاؤن کی جانب دھکیلا جا رہا ہے ۔کیرالا، مدھیہ پردیش اور راجستھان میں مکمل لاک ڈاؤن ہے انہوں نے ٹوئٹ میں لکھا کہ موجودہ صورتحال میں مالی طور پر کمزور طبقے کو مالی امداد فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔