قومی

  • قومی
  • Apr 16, 2021

قومی اسمبلی میں ملک میں امن اومان کی صورتحال پر بحث

قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی صدارت میں ہوا۔گستاخانہ خانوں اورملک میں ایک مذہبی جماعت کی طرف سے احتجاج کے حوالے ارکان نے اظہارخیال کرتے ہوئے کہا کہ ناموس رسالت پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا۔تاہم کسی جماعت یاگروہ کو قانون ہاتھ میں لینے اوراملاک کونقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔حکومت معاملے کو افہام وتفہیم سے حل کرے۔پارلیمانی امور کے وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا کہ ناموس رسالت کے حوالے سے وزیر اعظم خان نے اقوام متحدہ اورعالمی فورمز پر آوازبلند کی۔ مذہبی جماعت سے مذاکرات کیے گئے ان کی طرف سے امن اومان کی صورتحال کو خراب کرنا افسوس ناک ہے۔آئندہ اجلاس میں وزیر داخلہ ایوان میں اس حوالے پالیسی بیان دیں گے۔سپیکر نے ہدایت کی کہ تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ مشاورت کے بعد ناموس رسالت کے حوالے مشترکہ قرارداد ایوان میں پیش کی جائے ۔
پاکستان اورافغانستان کے درمیان سرحد پر نیواپاس اورگورسل پاس سرحدی پوائنٹ کوکھولنے کے حوالے سے توجہ دلاؤ نوٹس پر پارلیمانی سیکرٹری داخلہ شوکت علی نے ایوان کو بتایا کہ پاک افغان بارڈز پرچھ پوائنٹس ہفتے بھر تجارت کے لیے کھلےرہتے ہیں جبکہ پیدل آنے جانے والوں کے لیے چار دن سے بڑھا کر چھ دن کردیئے گئے ہیں۔نئے پوائنٹس کھولنے کاایک طریقہ کار ہے جس میں کئی وفاقی اورصوبائی محکمے کے درمیان مشاورت ہوتی ہے،جس پر سپیکر نے معاملہ سیفران کمیٹی کو بھجوادیا ۔جبری طورپرمذہب کی تبدیلی کے حوالے سے رکن قومی اسمبلی کھیل داس کے نقطہ اعتراض کے جواب پر پارلیمانی امور کے وزیر مملکت علی محمد خان نے کہا کہ جبری طورپر مذہب کی تبدیلی کے حوالے سے پارلیمانی کمیٹی سینٹ الیکشن کے باعث غیر فعال ہوگئی تھی ،کمیٹی کی دوبارہ تشکیل کی جائے، تاکہ اس حوالے سے قانون سازی ہوسکے،سپیکر نے معاملہ متعلقہ قائمہ کمیٹی کے سپرد کردیا۔
وزیر توانائی عمر ایوب خان نے برقی توانائی کی پیداوار ترسیل اورتقسیم کا انضباط ترمیمی آرڈیننس 2021 ایوان میں پیش کیا۔قومی اسمبلی کا اجلاس پیر کی دوپہرہ دو بجے تک ملتوی کردیا گیا۔