قومی

  • Feb 19, 2021

مقبوضہ جموںوکشمیر میں مثالی ہڑتال

بھارت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں وکشمیر میں من پسند یورپی سفارتکاروں کے دورے کے خلاف مسلسل دوسرے دن بھی ہڑتال کی گئی ۔نریندر مودی کی فسطائی بھارتی حکومت مقبوضہ علاقے کے زمینی حقائق پر عالمی برادری کو گمراہ کرنے کیلئے مغربی سفارتکاروں کو علاقے کا من پسند دورہ کرا رہی ہے۔
کشمیر میڈیاسروس کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس نے کہا ہے کہ بھارت کے مذموم عزائم کے خلاف مقبوضہ علاقے میں مثالی ہڑتال بھارت اور دورے پر آئے ہوئے یورپی سفارتکاروں کیلئے چشم کشاہے۔
حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر سے جاری بیان میں کہا کہ بھارت ایک جارح ملک کی حیثیت سے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق تنازعہ کشمیر کے پر امن حل کے تمام ذرائع کو تباہ کرنے پر تلا ہوا ہے ۔ ترجمان نے کشمیریوں کے حق خودارادیت کے مطالبے اور انہیں درپیش مشکلات کو نظر انداز کرنے پر یورپی وفد کے کردار پر بھی افسوس ظاہر کیا۔انہوں نے کہاکہ یورپی پارلیمانی گروپ نے جارحیت پسندبھارت کے پروٹوکول کو قبول اوراس کی کٹھ پتلیوں سے ملاقاتیں کرکے منصفانہ سفارتکاری کی اخلاقیات کو پامال کیا ہے۔
کشمیر کونسل فار جسٹس کے چیئرمین غلام نبی شاہین نے یورپی سفارتکاروں کے نام کھلے خط میں کہاہے کہ کشمیر ایک خوبصورت جیل ہے جسے نریندر مودی کی فسطائی حکومت نے5اگست 2019سے آگ میں جھونک رکھا ہے اور آگ کے شعلے بجھانے والاکوئی نہیں ہے۔
جموں وکشمیر پیر پنجال سول سوسائٹی کے امیر محمد شمسی اور جموں وکشمیر پیر پنجال پیس فاؤنڈیشن کے سربراہ حنیف کالس نے راجوری اور سرنکوٹ میں پارٹی اجلاسوں کے دوران کہا کہ یورپی سفارتکاروں کا مقبوضہ علاقے کا دورہ عالمی برادری کو کشمیر کی زمینی صورتحال کے بارے میں گمراہ کرنے کی کوشش ہے۔