قومی

  • Feb 19, 2021

تعمیراتی شعبے سےمتعلق رابطہ کمیٹی کااجلاس

وزیر اعظم عمران خان نے سرکاری اراضی اور لینڈ ریکارڈ کی ڈیجیٹلائزیشن پر زور دیتے ہوئےکہا ہے کہ ہاؤسنگ سوسائٹیوں کا تمام ڈیٹا متعلقہ ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کی ویب سائٹس پر یقینی بنایا جائے۔
اسلام آباد میں تعمیراتی شعبے سےمتعلق رابطہ کمیٹی کےاجلاس کی صدارت کرتےہوئےوزیراعظم نے کہا کہ صوبائی سطح پر سنٹرل ڈیٹا بنک بھی تشکیل دیا جائے تاکہ ان منصوبوں کی تفصیل ہر پاکستانی کو میسر ہو۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اعداوشمار فراہم نہ کیے جانے سے عوام میں اس تاثر کو تقویت ملے گی کہ سرکاری زمینوں پر ناجائز قبضے کی پشت پناہی ہوتی ہے لہذا اس تاثر کو زائل کرنا بہت ضروری ہے۔
شرکاء کو ملک میں تعمیراتی سرگرمیوں کے فروغ اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے منظوریوں کے عمل میں تیزی کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔ چیف سیکرٹری پنجاب نے بتایا کہ تعمیراتی منصوبوں کے حوالے سے اب تک پورٹل پر کل 17692 درخواستیں موصول ہوئی ہیں جن میں سے 11349 منظور ہو چکی ہیں۔
چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا نے بتایا کہ اب تک 3634 درخواستیں موصول ہوئیں جن میں سے 87 فیصدمنظور ہو چکی ہیں ۔اس مرحلے کے نتیجے میں مجموعی طور پر 190 ارب کی معاشی سرگرمیوں پیدا ہوگی۔
چیف سیکرٹری سندھ نے بتایا کہ صوبے میں اب تک 22تعمیراتی منصوبوں کی منظوری دی جا چکی ہے۔ شرکاءکو صوبوں کی جانب سے لینڈ ریکارڈ کو ڈیجیٹل کرنے کےعمل کےبارے میں بریفنگ دی۔
وزیرِ اعظم کو بتایا گیا کہ سندھ حکومت کی جانب سے ابھی ڈیٹا فراہم ہونا باقی ہے۔ چیف سیکرٹری سندھ نے بتایا کہ معاملہ سندھ کابینہ کے سامنے رکھا گیا ہے۔ منظوری کے بعد یہ ڈیٹا فراہم کیا جائے گا۔