قومی

  • قومی
  • Jan 13, 2021

پاکستان ،ترکی اورآذربائیجان کے درمیان دوطرفہ تعلقات کومزید گہرا اور فعال بنانے پر اتفاق

پاکستان ،ترکی اورآذربائیجان نے تینوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات کومزید گہرا اور فعال بنانے پر اتفاق کیاہے ۔اسلام آبادمیں تینوں ملکوں کے وزرائے خارجہ اجلاس میں فیصلہ کیاگیاکہ کہ اپنے اپنے خطوں میں امن ،استحکام اور ترقی کافروغ مشترکہ ہدف ہے ۔
پاکستان، ترکی اور آذربائیجان کے درمیان اسلام آبادمیں دوسرے سہہ فریقی مذاکرات ہوئے ۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی ،ترکی کے وزیر خارجہ مولود چاؤش اولو اورآذربائیجان کے وزیرخارجہ جیہون بیراموف نے مذاکرات میں اپنےاپنے ملک کی نمائندگی کی ۔مذاکرات میں معیشت ،سرمایہ کاری ،تجارت ،توانائی ،ماحولیات ،تعلیم اور ثقافت کے شعبوں میں سہ ملکی تعاون بڑھانے کےلئے نئے امکانات تلاش کرنے پر اتفاق کیاگیا۔
اجلاس میں تینوں وزرائے خارجہ نے مسلم اقلیتوں سمیت انسانیت کے خلاف جرائم کے ارتکاب اور انسانی حقوق کی سنگین اورمنظم خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا جس میں اسلاموفوبیاکابڑھتاہوا رجحان بھی شامل ہے تینوں ملکوں نے تمام متعلقہ فورمز پر اس عفریت کا مشترکہ مقابلے کرنے کے عزم کا اعاد ہ کیا۔
مذاکرات کےبعد تینوں وزرائے خارجہ نے مشترکہ اعلامیے پر دستخط کئے ۔اعلامیے پر دستخط کی تقریب کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتےہوئے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاکہ پاکستان کے دونوں ملکوں کے ساتھ گہرے مضبوط برادرانہ تعلقات ہیں۔ وزیرخارجہ نے کہاکہ انہوں نے اجلاس میں غیرقانونی طورپر بھارت کے زیر قبضہ جموں وکشمیرمیں انسانی حقوق کی سنگین پامالیوں ،طویل فوجی محاصرے اور آبادی کا تناسب تبدیل کےلئے دانستہ غیر قانونی اور بھارت کے یکطرفہ اقدامات سے آگاہ کیا ۔
ترکی کے وزیرخارجہ نے کہاکہ ترک قیادت اور عوام کے دلوں میں پاکستان اور پاکستانیوں کا خاص مقام ہے۔ترک وزیر خارجہ نے کہاکہ تینوں ملکوں میں تجارت، سرمایہ کاری بڑھانے کے وسیع امکانات ہیں۔
آذربائیجان کے وزیر خارجہ جیہون بیراموف نے کہاکہ کاراباخ کی آزادی کی دوسری جنگ میں پاکستان اور ترکی کی حمایت پر شکر گزار ہیں ۔انہوں نے کہاکہ تینوں ملک عالمی سطح پر ملکوں کے درمیان برابری کی بنیاد پر تعلقات کے حق میں ہیں ۔ تینوں ملک اسلاموفوبیا، بیرونی جارحیت ، غیر قانونی قبضے اور دہشت گردی کی مذمت کرتے ہیں ۔
تینوں وزرائے خارجہ نے کہاکہ دوسرے ملکوں کی ریاستی دہشتگردی سمیت ہر قسم کی دہشتگردی کامقابلہ کرنے کےلئے تعاون کومضبوط بنایاجائےگا ۔پاکستان ،ترکی اورآذربائیجان نے اس عزم کا اظہارکیاکہ تمام علاقائی مسائل کاحل جامع مذاکرات سے ممکن ہے ۔