بین الاقوامی

  • بین الاقوامی
  • Jan 12, 2021

صدر ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تیاریاں

امریکی کانگریس کے ڈیموکریٹس ارکان نےنائب صدر مائیک پنس کو 25ویں آئینی ترمیم پر عملدرآمد کرنے اور صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مواخذے کی قرارداد پر رائے شماری کی تیاری کرلی ہے ۔ ڈیموکریٹس ارکان نے امریکی ایوان نمائندگان میں ایک بل پیش کیا ہے جس میں صدر ٹرمپ پر اپنے حامیوں کو اشتعال دلانے اور بغاوت پر اکسانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ بل میں کہا گیا ہے کہ صدر ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی کارروائی شروع کی جائے۔۔۔ارکان نے ایک قرارداد بھی پیش کی ہے جس میں امریکی نائب صدر پائیک پنس سے 25ویں آئینی ترمیم پر عمل کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔25ویں آئینی ترمیم کے تحت صدر ٹرمپ کو عہدے سے قبل ازوقت ہٹایا جا سکتا ہے۔۔ایوان میں اس قرارداد پر رائے شماری آج ہوگی جبکہ مواخذے کے حوالے سےووٹنگ بدھ کے روز ہوگی ۔
ڈیموکریٹس کی طرف سے یہ کارروائی اس وقت عمل میں لائی جارہی ہے جب نومنتخب صدر جوبائیڈن کے اقتدار سنبھالنے میں محض ایک ہفتہ باقی رہ گیا ہے۔
دوسو سے زائد امریکی ڈیموکریٹس ارکان کانگریس نے صدر ٹرمپ کے خلاف مواخذےکا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ نے امریکی عوام کے اعتماد کو ٹھیس پہنچایا ہے ،ا نھوں نے پرامن اقتدار کی منتقلی کے عمل میں مداخلت کی ہے ۔۔ ارکان نے صدر ٹرمپ پر امریکی اداروں کی سلامتی کو داو پر لگانے اور جمہوری عمل کی ساکھ کو مجروح کرنے کے الزامات بھی عائد کئے ہیں ۔
اس سے قبل کانگریس میں ریپبلکن ارکان نے 25آئینی ترمیم پر عمل کے حوالے سے قرارداد کی متفقہ منظوری کی مخالفت کی تھی جس کے بعد ڈیموکریٹس کی جانب سے قرارداد پر رائے شماری کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔۔
سپیکر نینسی پلوسی نے ڈیموکریٹس ارکان کے نام اپنے خط میں کہا کہ نائب صدر مائیک پنس کو قرارداد کی منظوری کے 24گھنٹے کے اندر عملدرآمد کرنا چاہئے ۔ نائب صدر مائیک پنس نے ایسا کوئی قدم اٹھانے سے انکار کیا ہے۔۔