ٹاپ سٹوری

  • ٹاپ سٹوری
  • Dec 03, 2019

وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں وفاقی کابینہ کا اجلاس

وفاقی کابینہ کا اجلاس اسلام آباد میں وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں ہوا۔ مشیر خرانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کابینہ کو ملکی معاشی صورتحال خصوصاً معاشی اشاریوں میں بہتری کے حوالے سے بریف کیا۔ وزیرِ اعظم عمران خان نے اقتصادی اشاریوں اور خصوصاً عالمی اداروں کی جانب سے ملکی معیشت میں بہتری کے اعتراف پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی کاوشوں کی بدولت ملکی معیشت میں استحکام آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس عمل کو مزید مستحکم کرنا اور عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ انہوں نے کہا کہ معاشی استحکام کا حصول ایک اہم سنگ میل ہے۔وزیراعظم نے ہدایت کی کہ عوام کو معاشی میدان میں حاصل ہونے والی کامیابیوں سے آگاہ کیا جائے تاکہ کاروباری برادری کا اعتماد مزید مستحکم ہوہو۔
کابینہ نے کابینہ کمیٹی برائے نجکاری کے 15نومبر2019میں لیے گئے فیصلوں کی بھی توثیق کی گئی جن میں ایس ایم ای بنک کی نجکاری اور پی آئی اے کی ملکیت روزویلٹ ہوٹل کی ممکنہ نجکاری کے لئے قائم کمیٹی کے ٹرمز آف ریفرنس کی منظوری شامل ہے۔
کابینہ نے بچوں کے حقوق کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے اسلام آباد میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز ، ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ججز، سینئر سول ججز اور سول ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن ڈویژن کے مجسٹریٹ ججز کی عدالتوں کو بچوں کے مقدمات سننے والی عدالتیں نامزد کرنے کی منظوری دی۔ کابینہ نے جائیداد میں خواتین کے حق کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے متعارف کرائے جانے والے انفورسمنٹ آف وویمنز پراپرٹی رائٹس آرڈیننس 2019میں ترمیم کی بھی منظوری دی۔
چیئرمین اور مینیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن نے کابینہ کو بتایا کہ حکومتی اقدام سے مارکیٹ کے مقابلے میں یوٹیلیٹی اسٹور کارپوریشن پر فراہم کی جانے والی اشیاء خورونوش مارکیٹ سے کم ریٹ پر دستیاب ہوں گی ۔ کابینہ کو بتایا گیا کہ 2020تک پچاس لاکھ افراد کو احساس سہولت کارڈ کے اجراء کا کام مکمل کر لیا جائے گا۔
وزیرِ اعظم عمران خان نے یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن کو ہدایت کی کہ اشیائے ضروریہ کی خرید اری اور فراہمی کا عمل فوری طور پر مکمل کیا جائے تاکہ غربت کا شکار اور کم آمدنی والے افراد کو ریلیف فراہم کیا جا سکے۔