قومی

  • قومی
  • Oct 09, 2019

ڈاکٹر فردوس کی میڈیا سے گفتگو

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ احتجاج کرنا مولانا فضل الرحمان کا حق ہے تاہم یہ وقت احتجاج کیلئے مناسب نہیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان سے محبت کرنیوالے کسی کے ذاتی اور سیاسی ایجنڈے کا ساتھ نہیں دیں گے۔یہ بات انہوں نے لاہور میں اپٹما کے دفتر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی
اپٹما ہاؤس لاہور میں نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ مولانا فضل الرحمان مدارس کے طلبا کو سیاسی غذا کے طور پر استعمال کرنا چاہتے ہیں، جوکسی بھی طور درست نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ عوام پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنیوالوں کا ساتھ کبھی نہیں دیں گے۔مولانا کے اقدامات پاکستان کو سیاسی طورپر تقسیم کریں گے۔اقتدار سے محرومی اورذاتی مفادات کی خواہش رکھنے والے ہی مولانا کا ساتھ دے رہے ہیں۔
ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ وزیراعظم نے کرپشن کے خلاف ایکشن کی بات کی ہے تاکہ لوٹی ہوئی رقوم واپس لاکر ملک کے حالات بہتر کئے جائیں۔ انہوں نےکہاکہ ایسے حالات میں چٹان جیسے حوصلے لے کر اپنے ارادوں پر کھڑا ہونا پڑتا ہے۔
معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ پاکستان کی معیشت کا پہیہ چلنے سے مزدور کا چولہا جلتا ہے۔انہوں نے کہاکہ ٹیکسٹائل انڈسٹری پاکستانی صنعت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور وزیراعظم عمران خان نے ٹیکسٹائل انڈسٹری کے مسائل حل کرنے کیلئے فوری اقدامات پر زور دیا ہے۔
ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ وزیراعظم نے چائنہ کے صدر اوروزیراعظم سے ملاقات کی ہے۔ ملاقاتوں میں باہمی تجارت، سی پیک، اقتصادی ترقی اور روابط بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ سی پیک کے تحت لگنے والے انڈسٹریل زون سے ملک میں ترقی اور خوشحالی آئے گی۔