بین الاقوامی

  • بین الاقوامی
  • Oct 09, 2019

شامی حکومت ،کُردملیشیا بات چیت کے ذریعے معاملے کو حل کریں:روسی وزیرخارجہ

روس نے کہا ہے کہ شام کی علاقائی سالمیت کے تحفظ کو یقینی بنانے کی ضرورت پر زور دیا ہے جبکہ ترکی کا کہنا ہے کہ ترک فوجی دستے شامی باغیوں کے گروپ فری سیریئن آرمی کے ساتھ جلد ہی سرحد عبور کر کے شمالی شام میں داخل ہو جائیں گے۔
روس کے وزیرخارجہ سرگئی لاوروف نے قازقستان کے دورے کے دوران صحافیوں سے گفتگو میں شام میں امریکی اقدامات کو متضاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ شامی حکومت اورکُردملیشیا کو بات چیت کے ذریعے معاملے کو حل کرنا چاہیئے۔
دوسری جانب ترک صدر رجب طیب اردوان کے ایک قریبی ساتھی نے کہا ہے کہ ترک فوجی دستے شامی باغیوں کے گروپ فری سیریئن آرمی کے ساتھ جلد ہی سرحد عبور کر کے شمالی شام میں کُردملیشیا کے خلاف آپریشن کے لئے داخل ہو جائیں گے۔امریکی فورسز غیر متوقع طور پر علاقے سےنکل گئی ہیں۔ترک صدر رجب طیب اردوان نے چند روز قبل اے کے پارٹی کی سالانہ تقریب سے خطاب میں شام میں کُرد ملیشیا کیخلاف فوجی کارروائی کا اعلان کیاتھا۔