قومی

  • قومی
  • Jul 15, 2019

وادی نیلم اور نصیر آباد میں طوفانی بارشیں،سیلاب : ندی نالوں میں طغیانی سے31افراد جاں بحق ،7زخمی

آزادکشمیر میں وادی نیلم اور نصیر آباد میں طوفانی بارشوں اور سیلابی ریلوں نے تباہی مچا دی جس کے باعث مختلف واقعات میں 31افراد جاں بحق ہو گئے۔
وادی نیلم کے علاقے لیسوا میں طوفانی بارش اور سیلابی ریلے کے باعث 22افراد جاں بحق اور7زخمی ہو ئے۔اس قدرتی آفت میں درجنوں مکانات بھی تباہ ہو گئے اور ٹیلی مواصلات کا نظام بری طرح سے متاثر ہوا ۔
مظفرآباد کی تحصیل نصیر آباد میں مختلف حادثات میں 9افراد جاں بحق ہو گئے ۔ کہوڑی اور ڈونگہ کس کے مقام پر جیپ اور وین گر نے کے واقعات میں اموات ہوئیں۔ پاک فوج امدادی سرگرمیوں میں مقامی انتظامیہ کو مدد فراہم کر رہی ہے۔ دھنی بمبیاں نصیرآباد کے مقام پر پاک فوج کے ہیلی کاپٹرز نے 11پھنسے افراد کو بحفاظت ریسکیو کر لیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق علاقے میں ریلیف کیمپ قائم کردیئے گئے ہیں۔مختلف مقامات پرپھنسے ہوئے 52افرادکو محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا۔متاثرین کو خوراک،راشن اور میڈیکل کی سہولیات دی جارہی ہیں۔
نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی موبائل آپریشن کنٹرول نیلم ویلی میں قائم کر دیاگیا ہے اور لاپتہ افراد کی تلاش کا کام تیزی سے جاری ہے۔
صدر ڈاکٹر عارف علوی اوروزیر اعظم عمران خان نے آزادکشمیر میں طوفانی بارشوں اور سیلابی ریلے کے باعث قیمتی جانوں کے نقصان پر گہرے رنج کا اظہارکیا ہے۔ متاثرین کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی کہ متاثرہ علاقے میں امدادی کارروائیوں کو تیز کیا جائے۔
آزادکشمیر کے صدرسردار مسعود خان اور وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان نے آسمانی بجلی اور سیلابی ریلے سےجانی اورمالی نقصان پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے متاثرین کو ہر ممکن امداد فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔