بین الاقوامی

  • بین الاقوامی
  • Jul 11, 2019

دوحہ:امریکہ،طالبان امن مذاکرات کا ساتواں دورختم

امریکہ اور طالبان کے درمیان افغانستان میں قیام امن سے متعلق مذاکرات کا ساتواں دور دوحہ میں ختم ہو گیا ہےجس میں چار اہم ایشوز پر پیشرفت ہوئی ہے۔
افغانستان کے لئے امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد نے کہا ہے کہ فریقین کے درمیان انتیس جون سے جاری مذاکرات کے ساتویں دور میں جن ایشوز پر پیشرفت ہوئی اُن میں انسداد دہشت کی یقین دہانی، افغانستان سے غیرملکی افوزج کا انخلاء، جنگ بندی اور انٹراافغان بات چیت شامل ہیں۔زلمے خلیل زاد نے کہا کہ امریکہ کواب افغانستان کی طرف سے کوئی خطرہ نہیں اور افغان عوام بھی امریکیوں کی اپنے ملک میں موجودگی پسند نہیں کرتے اس لئے فوجی نکتہ نظر کے پیش نظرامریکہ،افغانستان سے نکل جائے گا۔انہوں نے کہا کہ مستقبل میں امریکہ، افغانستان کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے۔طالبان کے چیف مذاکراتکار عباس ستانکزئی نے بھی دوحہ میں صحافیوں کو بتایا کہ فریقین کے درمیان اختلافات دور ہوگئے ہیں، اب صرف معاہدے کے مسودے پر دستخط ہونا باقی ہیں جو بہت جلد ہوجائیں گے۔