بین الاقوامی

  • بین الاقوامی
  • May 24, 2019

بھارت لوک سبھا انتخابات

بھارت میں ہونے والےپارلیمانی انتخابات کے غیر حتمی اور غیرسرکاری نتائج کا اعلان کر دیا گیا ہے۔انتہا پسند بھارتیہ جنتا پارٹی نے لوک سبھا میں واضح اکثریت حاصل کر لی ہے۔
بھارت میں سات مرحلوں میں ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے لئے انیس مئی کو آخری مرحلے میں ووٹ ڈالے گئے۔غیر حتمی اور غیرسرکاری نتائج کے مطابق وزیراعظم نریندر مودی کی انتہا پسند بھارتی جنتا پارٹی کی سربراہی میں اتحاد "این ڈی اے" نے لوک سبھا کی پانچ سو بیالیس میں سے تین سو تئیس نشستیں حاصل کی ہیں جبکہ کانگریس اور اس کی اتحادی جماعتیں ایک سو سات نشستیں حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی ہیں۔غیر اتحادی جماعتوں نے ایک سو بارہ نشستیں حاصل کی ہیں۔ حکومت سازی کے لیے کسی بھی جماعت کو دوسو تہتر نشستوں کی ضرورت ہوتی ہے۔
مسلمانوں اور دوسری اقلیتوں میں بی جے پی کے دوبارہ اقتدار میں آنے سے خوف و ہراس پیدا ہوگیا ہے۔انسانی حقوق کی تنظیم "ہیومن رائٹس واچ" کے مطابق دوہزار چودہ میں نریندر مودی کی بھارتیہ جنتا پارٹی کے اقتدار میں آنے کے بعدمسلمانوں اور دوسری اقلیتوں کے خلاف انتہا پسند ہندوؤں کے پُرتشدد واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔ہیومن رائٹس واچ کے مطابق مئی دوہزار پندرہ سے دسمبر دوہزار اٹھارہ کے درمیان انتہا پسند ہندوؤں نے بھارت کی بارہ ریاستوں میں چھتیس مسلمانوں سمیت چوالیس افراد کوقتل کیا۔ ان افراد کو گائے کو ذبح کرنے اور ٹرانسپورٹ کرنے کے الزام میں قتل کیا گیا۔بی جے پی کے گزشتہ دور حکومت میں بھارتی کسان بھی مودی سرکار کی پالیسیوں سے نالاں رہے ہیں۔