بین الاقوامی

  • بین الاقوامی
  • Jul 20, 2016

ترک سکیورٹی کونسل کا ہنگامی اجلاس

ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان آج سکیورٹی کونسل کے ہنگامی اجلاس میں ملک میں استحکام لانے کے منصوبے پیش کریں گے۔
وزیر اعظم بن علی یلدرم نے کہا ہے کہ آج کے اجلاس میں گذشتہ ہفتے بغاوت کی کوشش کے بعد پیدا ہونے والی غیر معمولی صورت حال کے پیش نظر ترکی کو بچانے کے لیے اہم فیصلے کیے جائیں گے۔
دوسری طرف ترکی میں بغاوت کے کچلے جانے کے بعد سے اب تک تقریبا 50 ہزار افراد کو یا تو ملازمتوں سے برطرف کر دیا گیا ہے یا حراست میں لے لیا گيا ہے۔ان میں سکیورٹی سروسز سے لے کر سول سروسز تک اور سکول سے لے کر میڈیا تک تمام محکموں کے لوگ شامل ہیں۔
ترکی کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق اعلیٰ تعلیم کے ادارے نے یونیورسٹیوں کے 1500 سو سے زیادہ ڈینز کو مستعفی ہونے کا حکم دیا ہے۔
صدر طیب اردوغان نے سازش کا ذمہ دار ملک میں پائے جانے والے ایک ’متوازی نظام‘ کو قرار دیا تھا۔