قومی

  • قومی
  • Jul 11, 2018

شہید ہارون بلور کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی

پشاور میں دہشتگردی کے دلخراش واقعے میں شہیدہونیوالے ہارون بلور سمیت دیگر شہدا کو ہزاروں اشکبار آنکھوں کے سامنے سپردخاک کردیا گیا ،اے این پی نے واقعے پر تین روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے،حملے میں 21افراد جاں بحق اور 60سے زائد زخمی ہوئے-
دہشتگردوں نے پشاور کو ایک بار پھر زخم زخم کردیا اپنے ان خون آلود پنجوں سے جو کئی بے گناہوں کی جان لیکر بھی کسی عفریت کی طرح پشاور کے عوام کی جان چھوڑنے کو تیار نہیں،دہشتگردوں کا اس بار نشانہ بنے بیرسٹر ہارون بلورجو یکہ توت میں اے این پی کی کارنر میٹنگ میں شریک ہونے پہنچے ہی تھے کہ خودکش بمبار نے دھماکہ کرکے ان سمیت کئی ہنستے بستے گھر اجاڑ دئیے،شہید ہارون بلور کی نماز جنازہ پشاور کے علاقہ وزیر باغ میں ادا کی گئی جس میںعوامی نیشنل پارٹی اوردیگر سیاسی جماعتوں کی قیادت سمیت اے این پی کے ہزاروں سوگوارکارکنوں نے شرکت کی ،اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی فول پروف انتظامات کئے گئے تھے،دھماکے میں شہیدپی کے 78سے اے این پی کے امیدوار ہارون بلور حاجی غلام احمد بلور کے بھتیجے اور 2012میں دہشتگردی کی کارروائی میں شہید ہونیوالے اس وقت کے سینئر صوبائی وزیربشیر احمد بلور کے صاحبزادے تھے،ا س سے پہلے اے این پی کے جاں بحق کارکنوں میں سے9کی اجتماعی نماز جنازہ عیسی خیل قبرستان پشاور میں ادا کی گئی جس میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ،
ہسپتال ذرائع کے مطابق خودکش حملے کے زخمیوں میں سے سات کی حالت تشویشناک ہے ،،نگران وزیراعلی جسٹس ر دوست محمد خان کی ہدایت پر صوبائی وزرا کے وفد نے لیڈی ریڈنگ ہسپتال کا دور ہ کیا اور زخمیوں کو سرکاری خرچ پر مفت اور بہترین علاج کی یقین دہانی کرائی ۔واقعے کی تحقیقات کیلئے سات رکنی جے آئی ٹی قائم کردی گئی ہے جو ایک ہفتے کے اندر اپنی رپورٹ پیش کرے گی ۔
پشاور میں دہشتگردی کی اس خونی کارروائی کے بعد سوگ کی کیفیت برقرار ہے اور تمام سیاسی جماعتوں نے اپنی انتخابی سرگرمیاں معطل کرنے کا اعلان کیا ہے،پشاور بار ایسوسی ایشن نے سانحہ یکہ توت کے پیش نظر تین روزہ سوگ کا اعلان کرتے ہوئے عدالتوں کا بائیکاٹ کیا،بلور ہائوس میں تعزیت کیلئے آنیوالوں کا تانتا بندھا رہا،نگران وزیراعلی جسٹس ریٹائرڈ دوست محمدخان ،گورنر اقبال ظفر جھگڑا ،کور کمانڈر پشاور سمیت اہم شخصیات اور سیاسی رہنماں نے غلام احمد بلور سے تعزیت کی اور شہید کے درجات کی بلندی کیلئے فاتحہ خوانی کی ۔
نگران وزیراعلیٰ جسٹس (ر)د وست محمد خان نے یکہ توت خودکش دھماکے کے شہدا اور زخمیوں کے لئے معاوضے کی فوری فراہمی کا اعلان کیا ہے۔انہوں نے ہدایت کی ہے کہ چوبیس گھنٹوں کے اندر معاوضے کی ادائیگی یقینی بنائی جائے۔
اے این پی کے سربراہ اسفند یار ولی خان نے میڈیا سے بات چیت کرتے کہا کہ ہم دہشتگردی کی ان کارروائیوں کے باوجود میدان خالی نہیں چھوڑیں گے ۔
صدر ممنون حسین اور وزیر اعظم ناصرالملک نے پشاور میں ہونے والے دھماکے کی شدید مذمت کی ہے۔ انہوں نے ہارون بلور کے اہل خانہ سے تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت کے لیے ان کی قربانیاں ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ صدر مملکت نے مزید کہا کہ دہشت گردوں کی بزدلانہ کاروائیوں سے قوم کے حوصلے پست نہیں ہوں گے اور دہشت گردی کے خلاف کارروائیاں جاری رہیں گی۔