قومی

  • قومی
  • Jun 24, 2018

چیف جسٹس کی واپڈا کو ہسپتالوں میں لوڈشیڈنگ نہ کرنے کی ہدایت

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ہسپتالوں میں بجلی کی بہت زیادہ اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا نوٹس لیا ہے اور واپڈا کو ہسپتالوں میں لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔

انہوں نے صوبے کے چیف سیکرٹری اور سیکرٹری صحت کو ہدایت کی کہ وہ صوبے کے مراکز صحت اور ضلعی ہیڈکوارٹرز ہسپتالوں میں ضروری سہولیات کی فراہمی کے بارے میںآئندہ پیر تک تفصیلی رپورٹ جمع کرائیں۔

اس سے پہلے آج لاڑکانہ میں ضلعی عدالتوں کے دورے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے چیف جسٹس نے ضلعی عدلیہ کی مجموعی کارکردگی اور استغاثہ کی خدمات کا جائزہ لیا۔

انہوں نے ضلعی عدالتوں کے ججوں کو ہدایت کی کہ وہ مقدمات کا قانون کے مطابق جلد فیصلہ کریں تاکہ لوگوں کو جلد انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جاسکے۔

میاں ثاقب نثار نے سندھ ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اور رجسٹر ار سے کہا کہ وہ اپنی ذمہ داریوں سے غفلت برتنے والے اور اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہ کرنے والے ججوں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی کریں۔

انہوں نے جوڈیشل لاک اپ کا بھی دورہ کیا اور قیدیوں کی شکایات اور مسائل سنے۔

بعد میں لاڑکانہ میں وکلاء کے ایک اجتماع سے گفتگو کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ جوڈیشل نظام کا بنیادی مقصد انصاف فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ہے۔

میاں ثاقب نثار نے کہا کہ نکتہ چینی ججوں پر نہیں ان کے فیصلوں پر ہونی چاہئے۔

انہوں نے اس امر پر افسوس ظاہر کیا کہ سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ میں اعلیٰ سطح پر سیاسی مقدمے بازی کے بوجھ کی وجہ سے عوامی مقدمات کے فیصلوں میں تاخیر ہو رہی ہے۔

لاڑکانہ کی ضلعی عدالتوں کے دورے میں بعض افراد نے ان سے شکایت کی کہ ان کے عزیز و اقارب لاپتہ ہیں اور ہمیں ان کے بارے میں کچھ معلوم نہیں کہ وہ کہاں ہیں۔

چیف جسٹس نے اس مسئلے کا نوٹس لیتے ہوئے سندھ رینجرز کے ڈائریکٹر جنرل، صوبائی آئی جی پولیس اور آئی بی، آئی ایس آئی اور ایم آئی کے صوبائی سربراہان کو کل سپریم کورٹ کی کراچی رجسٹری میں طلب کیا ہے۔