قومی

  • قومی
  • Jan 13, 2018

آرمی چیف کو امریکی کمانڈراور امریکی سینیٹر کے ٹیلیفون

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کو امریکی سینٹ کام کے کمانڈر جنرل جوزف ایل ووٹل اور ایک امریکی سینیٹر نے ٹیلیفون کیا ۔آئی ایس پی آر کے مطابق ان ٹیلیفون کالز میں امریکی صدر ٹرمپ کے ٹویٹ کے بعد پاک امریکہ سیکیورٹی تعاون کے حوالے سے تبادلہ خیال ہوا ۔
کمانڈر سینٹ کام جنرل جوزف ایل ووٹل نے آرمی چیف کو سکیورٹی معاونت اور کولیشن سپورٹ فنڈ کے حوالے سے امریکی فیصلے سے آگاہ کیا ۔
آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ دہائیوں پر محیط تعاون کے باوجود امریکہ کی طرف سے حالیہ بیانات سے پوری پاکستانی قوم بددل ہوئی ہے ۔متفقہ قومی ردعمل میں انہی جذبات کا اظہارکیا گیا۔
آرمی چیف نے کہاکہ امریکی مالی تعاون کے بغیر بھی پاکستان اپنے قومی مفاد میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں اپنی سنجیدہ کوششیں جاری رکھے گا ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان امداد کی بحالی کی بجائے دہشتگردی کے خلاف جنگ اورخطے میں امن واستحکام کےلئے اپنی قربانیوں ،کردار اور غیر متزلزل عزم کا باوقار انداز میں اعتراف چاہتا ہے ۔دوسرے فریقوں کے ساتھ مل کر ہم اس جنگ کو منطقی انجام تک پہنچانے کےلئے پرعزم ہیں ۔جنرل قمر جاویدباجوہ نے کہاکہ خطے میں طاقت کےلئے مقابلہ بازی سے پاکستان نے بھاری نقصان اٹھایاہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں افغان شہریوں کی سرگرمیوں کے حوالے سے امریکی تشویش سے بخوبی آگاہ ہیں ۔آپریشن ردالفساد کے تحت پہلے ہی دہشتگردوں کے خلاف رنگ اورنسل سے بالا تر ہوکرمتعدد اقدامات کئے جارہے ہیں اور اس سلسلے میں افغان مہاجرین کی واپسی ضروری ہے ۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ پاکستان یکطرفہ طورپر سرحدی انتظام کو مستحکم کرنے کےلئے اقدامات کررہاہے ۔دوطرفہ سرحدی انتظام افغانستان کی بھی ترجیح ہونی چاہیے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کو قربانی کا بکر ا بنانے کے رجحان کے باوجود افغانستان میں امن کےلئے تمام اقدامات کی حمایت جاری رکھیں گے ۔کیونکہ خطے میں پائیدار امن واستحکام کے لئے افغانستان میں امن ضروری ہے۔
کمانڈر سینٹ کام جنرل جوزف ایل ووٹل نے کہاکہ امریکہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار کو قدر کی نگاہ سے دیکھتاہے ۔توقع ہے کہ دوطرفہ تعلقات میں تناؤ عارضی ہوگا ۔کمانڈر سینٹ کام نے آرمی چیف کو بتایاکہ امریکہ پاکستان میں کسی یکطرفہ کارروائی پر غور نہیں کر رہا ۔افغانستان کے خلاف پاک سرزمین استعمال کرنے والے افغان باشندوں کے خلاف کارروائی چاہتے ہیں ۔جنرل جوزف ایل ووٹل نے پاکستان کی جانب سے افغان مہاجرین کی میزبانی کے کسی بھی طرح غلط استعمال کو روکنے کےلئےحالیہ اقدامات کو سراہا ۔انہوں نے اتفاق کیاکہ باہمی تعاون سے مشترکہ مقاصد کاحصول ممکن ہے ۔